پاکپتن ۔۔۔ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن کےمیڈیکل سپریڈینٹ ڈاکٹر امان اللہ خان کی انتھک محنت کے نتائج

1 -ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں جدید ڈائیلس سنٹر کا قیام

2-شام کی ڈینٹل اوپی ڈی کا قیام

3-ڈسٹرکٹ ہسپتال میں ایکسپریس لائن کا اجراء

4-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں سوئی گیس کا اجراء

5-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن کے گائنی واڈ میں سرجیکل او پی ڈی واڈ اور ہیپائٹس واڈ میں الٹرا ساوئڈ میشن مہیا کی

6-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں ایکو کارڈوگرافی مہیا کرنا

7-کلر ڈوویلپر کا فزیشن روم اور گائنی واڈ میں مہیا کیا

8-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں 622ویلنٹیر بلڈ ڈونر کی لسٹ مہیا کرنا

9- ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن 64 ایچ ڈی سی سی ٹی وی کیمرہ انسٹال کیے

10-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن کی ایمرجنسی میں پولیس خدمت کاونٹر کا اجراء ایم ایل سی کی سہولت کے ساتھ

11- ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں سینٹرل آکسیجن کا ایمرجنسی اور کارڈیک سنٹر میں اجراء

12-ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں دور دراز سے آنے والے مریضوں کے لواحقین کے لے عارضی پناہ گاہ کا قیام

13- ڈسسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں مریضوں اور ان کے لواحقین کے ساتھ آنے والے بچوں کے لے پلے لینڈ کا انتظام

14- ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن میں 7ڈاکٹروں کے سٹاف سے 33ڈاکٹروں کا انتظام کرنا میڈیکل سپریڈینٹ ڈاکٹر امان اللہ خان اور اس کی ایڈمنسٹریشن ٹیم کی انتھک کوششوں کا نتیجہ ہے

15 -پاکپتن ڈسٹرکٹ ہسپتال کو ISO 9001:2015&ISO 14001:2015 کا ایواڈ یافتہ ہسپتال بنانا میڈیکل سپریڈینٹ ڈاکٹر امان اللہ خان کا ایک ایسا کارنامہ جو پاکپتن کی عوام اور ڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن کے ڈاکٹر اور اس کا سٹاف صدیوں تک یاد رکھے گا ۔۔لاہور سے ملتان تک کی ہسپتال کی بیلٹ میں یہ ISO کا سرٹیفکیٹ ملنے کا اعزاز صرف۔پاکپتن کے ڈسٹرکٹ ہسپتال کو ہے

16-پنجاب میں پہلی مرتبہMSDS پنجاب ہیلتھ کیر کمیشن سےڈسٹرکٹ ہسپتال پاکپتن نے %25۔99 نمبر حاصل کرکے پہلی پوزیشن حاصل کی یہ سب کچھ ڈاکٹر امان اللہ خان کی دن رات کی انتھک محنت کا نتیجہ ہے