اسلام آباد:  ڈی پی او پاکپتن رضوان گوندل کے تبادلے سے متعلق ازخودنوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے خاور مانیکا سے استفسار کیا کہ مانیکاصاحب!آپ زندہ ہیں،احسن جمیل گجرکس کاکفیل ہے؟۔اس پر خاور مانیکا روسٹرم پر آگئے ۔ خاور مانیکا نے عدالت کو بتایا کہ احسن گجراوران کی اہلیہ سے ہماری فیملی کے1997 سے تعلقات ہیں،ڈی پی او سے کہا آپ نے بدمعاش چھوڑے ہوئے ہیں؟،بیٹی نے کہاپولیس اہلکاروں نے شراب پی رکھی ہے،میں نے پولیس والوں کوڈانٹا،ان سے شراب کی بوآرہی تھی،میں نے کہا جہاں یہ جارہی ہیں اب اسی دربارسے معافی ہوگی۔ چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہمیں بیٹی کاتقدس عزیز ہے،جن پولیس اہلکاروں نے بچی کاہاتھ پکڑاان کیخلاف ایکشن لیں گے۔ خاور مانیکا نے کہا کہ میں نے ڈی پی او سے کہاکہ ایکشن لیں،میری بیٹی نے کہاکیا کوئی عورت رات کوپیدل نہیں چل سکتی؟چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ بیٹی کےساتھ جوہوااس پرایکشن لیں گے۔