پاکپتن (حسن بخاری سے) سابق صوبائی وزیر زراعت و لٹریسی اور سابق رکن اسمبلی ڈاکٹر فرخ جاوید نے کہا کہ جیت ہو یا شکست دونوں صورتوں میں انسان کو بہت کچھ سیکھنے اور سمجھنے کا موقع ملتا ہے 2002 می انسانیت کی خدمت کا مشن لیکر سیاست کے میدان میں قدم رکھا تو حلقہ کی عوام نے اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے مجھے تین بار مسلسل کامیابی سے ہمکنار کرایا، ڈاکٹر فرخ جاوید نے کہا کہ پہلے 1997 میں انکے بھائی میاں نوید طارق اس حلقہ سے ایم پی اے منتخب ہوئے اور پھر 2002، 2008 اور 2013 میں عوام نے مجھے رکن صوبائی اسمبلی منتخب کرایا مجھے اس بات پر فخر ہے کہ حلقہ میں ریکارڈ ترقیاتی کام کروائے، ڈاکٹر فرخ جاوید الیکشن 2018 میں انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا لیکن مدمقابل امیدوار کو 61 ہزار اور انہیں 54 ہزار سے زائد ووٹ ملے جو انکے لئے ایک بڑا اثاثہ ہیں، ڈاکٹر فرخ جاوید مسلم لیگی کارکنان اور حلقہ کے لوگوں کی خدمت کے لئے انکا دفتر 24 گھنٹے کھلا رہے گا، ڈاکٹر فرخ جاوید